MIRZA ISHQ

2+

 

میر عشق اور مرثیۂ زعفرؒ  جن

جناب نیر مسعود صاحب نے اپنے طویل مضمون ’زعفر جن‘ (بحوالہ ’منتخب مضامین‘ از نیر مسعود، آج کی کتابیں، کراچی ، ۲۰۰۹) میں ایک واقعہ پوری تفصیل کے ساتھ بیان کیا ہے اور مثالوں کے ذریعے اس کے ساتھ جڑی نہایت دلچسپ روایتِ مرثیہ کے خدوخال بیان کئے ہیں۔ انہوں نے میرانیس، مرزا دبیر اور میر مونس کے مرثیوں کا سرسری تذکرہ کرتے ہوئے میر حسین میرزا عشق کے مرثیے ’عروج اے مرے پروردگار دے مجھ کو‘ کو زعفر جن کے موضوع پر بہترین شاہکار قرار دیا ہے۔ ان کے مطابق میرزا عشق کے مرثیے کی منفرد ترین خاصیت اس کے راویوں کا پیچیدہ نظام ہے۔مرثیے کی استخواں بندی کل آٹھ راویوں کی مدد سے ہوئی ہے، جن میں میرزا عشق پہلے راوی ہیں جو روایتی مناجات اور کربلا کے منظر سے آغاز کرتے ہیں۔ نقشہ بندی اور باادب مناجات کے بعد ایک دوسرے راوی جو کوئی عالم ہیں ایک کتب خانے میں اس کتاب کے ملنے کا ذکر کرتے ہیں جس میں زعفر جن کا قصہ نقل ہوا ہے۔ اس کتاب کا مصنف تیسرا راوی ہے جس کی کشتی سمندر کے سفر کے دوران تباہ ہو جاتی ہے اور وہ بے ہوش، ایک تختے کے سہارے موجوں کے رحم و کرم پر رہ جاتا ہے۔ آنکھ کھلتی ہے تو خود کو ایک جزیرے پر پاتا ہے جہاں اسے ایک عجیب و غریب شخص نظر آتا ہے جو روتے روتے زمین پر انگلی سے ’’حسین‘ لکھ رہا ہوتا ہے۔

کوئی درخت نہ آدم نہ جانور دیکھا

عجیب عالمِ  عبرت ادھر ادھر دیکھا

بڑھا جب آگے عجب شخص پرخطر دیکھا

خموش بیٹھے ہوئے اس کو خاک پر دیکھا

رواں تھے اشک برابر زمین پر اس کے

پڑے تھے بال سرا سر زمین پر اس کے

اس تحریر کو نیر مسعود صاحب کے مضمون کی ایک مختصر ترین تلخیص کہا جا سکتا ہے لیکن پورا مضمون پڑھنے کے لائق ہے۔ وہ ذکر کرتے ہیں کہ میر عشق نے اس مرثیے پر کیسی کیسی داد وصول کی۔ جب عشق نے یہ مرثیہ پڑھا انیس و دبیر دونوں اس مجلس میں موجود تھے اور میر انیس نے انہیں ہدایت کی کہ اس کو اپنی قبر میں رکھوا لینا کہ تمہاری نجات کے واسطے کافی ہو گا۔

Special Thanks to;  Zeeshan Zaidi for this short Introduction & Syed Ashtar Abbas Naqvi for providing 27 Marasi from Volume II of Mirza Ishq Marsiyas

MARASI E MIRZA ISHQ

AABID KA BAAGH E DEHR MAIN HAMSAR BHALA KAHAN

AAMAD HAI RAN MAIN SHEFTAYE ZULJALAL KI

AAQA E QADRDAN KE GHULAMON KA ZIKR HAI

AAYA JO TOORO NOORO ZIA PAR KALEEM E SUBH

ABBAS AFTAB E SEPEHRE JALAL HAI

ABBAS SARKASHON KE LIYE ZULFAQAR HAI

AHLE AZA MAIN HASHR KA SAMAN AAJ HAI

AINA E KHATIR JO MUKDAR HAI BAJA HAI

AYE ISHQ HAI BAJA YEH MAHAL IFTIKHAR KA

AYE ISHQ KARBALA KA SAMAAN DEKH AAYE HAIN

AYE ISHQ KARBALA KA SAMAN DEKH AAYE HAIN

AYE KAJ KALA SUBHA DIKHA BANKPAN APNA

AYE SHAH E KHURASAN TERI SHAUKAT KE TASADDUQ

AZAL SE ISHQ E JANAB E AMEER HAI HUM KO

BARBAAD AYE KHUDA NA KOI BADSHAAH HO

BARBAAD AYE KHUDA NA KOI BADSHAH HO

BARBAAD ILAHI NA KOI PARDA NASHEEN HO

BARBAD ELAHI NA KOI PARDA NASHEEN HO

BEEMAR SE FURQAT KA ALAM UTH NAHIN SAKTA

BILQEES KO ALI KE SULAIMAN KI YAD HAI

CHEHRA HAI IS KALAM KA CHEHRA UROOS KA

DAR E FANA MAIN SHADI E GHAM KI PUKAR HAI

DUNYA MAIN KYA KARE KOI TAMEER QASR KI

FATHO ZAFAR KI AINA DARI KA WAQT HAI

GULGOON QABA E ARSA E PAIKAR KON HAI

HAI SAIB E BAGH E KHULD KI BO ZULFAQAR MAIN

IQBAL SHAH E DEEN KE HUMA HAIN ALI AKBAR

ISHQ E KHUDA HAI JUNBISH E ABRU E MUSTAFA

ISHQ TAJ E SAR E FASAHAT HAI

JAB GAYI ITRAT E MEHBOOB E KHUDA ZINDAAN MAIN

JAB INTAQAL E HADI E KON O MAKAN HOA

JAB KHAK NASHEENON KI REHAI KE DIN AAYE

JAB PERAHAN E SHAB FALAK E PEER NE BADLA

JAB RANG AASMAN O ZAMEEN KA BADAL GAYA

JANGAH MAIN SABR E GUL E ZAHRA KI GHARI HAI

JANNAT KI SANAD AASION KI NAD E ALI HAI

KARTA HAI SARAFRAZ KHUDA NAMWARON KO

KHURSHEED E AASMAN E ADAB KA TALU HAI

KIS PHOOL KO TAQDEER CHURATI HAI CHAMAN SE

KIS TASHNA LAB KE GHAM SE KALEJA KABAB HAI

MAIN TAIR E KHUSH NAGHMA E GULZAR E HASAN HOON

MAUJIZ NUMA KE WASF NE MAUJIZ BAYAN KIYA

MEHMAN SARAE DAHR MAIN KYA BAAT CHAHIYE

MEHTAB SE AKHTAR KI JUDAI KA BAYAN HAI

PADAR KI MAUT HAI MARNA JAWAN BETAY KA

PEHNI JO SITARONKI ZIRA PEER E FALAK NE

SADR E ZEEN SE JO ZAMEEN PAR SHAH E SAFDAR AAYE

SARDAR SHAHEEDON KE HUSSAIN IBN E ALI HAIN

SEB KI TURBAT E SHABBIR SE BOO AATI HAI

SHAME E RUKH E SHABBIR KE PARWANA HAIN ABBAS

SHER E KHUDA KE IJZ MAIN HAM LAJAWAB HAIN

SITARON KI AAMAD HAI KALI GHATA MAIN

SOM O SALAT NAAM HAI ISHQ E HUSSAIN KA

TARON SE AASMAN KI JO ZEENAT KHUDA NA KI

UROOJ AYE MERE PARWARDIGAR DE MUJH KO

YAKTA HAI AAFTAB SHAFAQ POSH MUSTAFA

YARAB HO KARBALA E MUALLA MAZAR E ISHQ

ZAKHMI HOA JO YUSUF E YAQUB E KARBALA

 

TOTAL MARSIYAS = 56

 

 

 

681total visits,1visits today

eMarsiya – Spreading Marsiyas Worldwide