MIRZA AUJ – اوج

 

★ مرزا محمد جعفر اوج ؔ ★

دبیر کے بڑے فرزند تھے ۔ . مرزا اوج اعلی’ پاۓ کے مرثیہ نگار اور شاعری کے بڑے مجتہد تھے ۔ ان کے مرثیوں میں انشا اللہ ، دبیر اور انیس کا رنگ ملتا ہے ۔ شبلی نعمانی کا یہ قول ہے کہ “انصاف یہ ہے کہ آج مرزا اوج سے بڑھ کر کوئ شاعر اور مرثیہ گو نہیں ہے” ان کے ایک کلام کا شعر خوب ہے

الٹ گیا در ِ خیبر سے پہلے قلعۂ چرخ
خدا کے ہاتھ نے جو ُالٹا آستینوں کو

اس پس منظر میں اوج نے حضرت امام حسین علیہ اسلام سے عقیدت کا اظہار کیا ہے

ہم سب اے کاش جہنم میں ہی جاتے مولا
پر نہ یہ داغ ِ جگر آپ اُٹھاتے مولا
امن عصیاں سے نہ ہم حشر میں پاتے مولا
آپ غربت میں مگر سر نہ کٹاتے مولا
ہجر ِ صغرا کا نہ داغ علی اکبر سہتے
چین سے گھر میں صدا قبلۂ عالم رہتے

حیف اس وقت ہوئے کیوں نہ ہم اے شاہ ِ کریم
جوش دل اب یہی کہتا ہے خدا اس کا علیم
نہ خلش اس میں رضا کی ہے نہ آمیزش بیم
نہ پئے دوری دوزخ نہ پئے فوز عظیم
جب تو قاصر رہے ، پر آج نہِں قاصر ہیں
آپ کے دشمنوں سے لڑنے کو ہم حاضر ہیں

Special Thanks to Zeeshan Zaidi, UK for this short biography!

مراثئ مرزا اوج

اقلیم سرکشی کا محاصل غرور ہے

AQLEEM SARKASHI KA MAHASIL GHUROOR HAI

باغ سخن میں رنگ جما ہے بہار کا

BAGH E SUKHUN MAIN RANG JAMA HAI BAHAR KA

بہم نفاق پہ جب فوج شام شوم ہوئ

BAHAM NIFAQ PE JAB FAUJ E SHAM SHOM HOI

ثناۓ خامس آل عبا ہے جان سخن

SANA E KHAMIS E AALE ABA HAI JAN E SUKHUN

جب شاہ کم سپاہ کا لشکر ہوا شہید

JAB SHAH E KAM SIPAH KA LASHKAR HOA SHAHEED

جب نور صبح قتل سے روشن جہاں ہوا

JAB NOOR SUBAH QATL SE ROSHAN JAHAN HOA

حق نے کیا کیا شرف اے خاک شفا تجھ کو دیۓ

HAQ NE KYA KYA SHARAF

دو رنکئ چمن روزگار توام ہے

DO RANGI E CHAMAN E ROZGAR TAWAM HAI

زہے معاون و انصار سرور اکرم

ZAHE MUAWIN O ANSAR SARWAR E AKRAM

سرگرم نالہ بلبل طبع نزار ہے

SARGARM NALE BULBUL E

سروش غیب سے گویا زبان حمد خدا

SAROSH E GHAIB HAI GOYA ZUBAN E HAMD E KHUDA

ظلمت ہوئ جب زلف کشا پردہء شب میں

ZULMAT HOI JAB ZULF KUSHA PARDA E SHAB MAIN

کرشمہ ساز فصاحت ہے خوش بیانی اوج

KARISHMA SAZ E FASAHAT HAI KHUSH BAYANI E AUJ

کس کام کی زبان جو صدق آشنا نہو

KIS KAM KI ZUBAN JO SADAQ ASHNA NA HO

مشہور بہار چمنستاں ہے گلوں سے

MASHOOR BAHAR E CHAMIANISTAN HAI GULOON SE

نکلا کلیم مہر کرن کا عصا لۓ

NIKLA KALEEM E MEHR KIRAN KA ASA LIYE

ہوا افق سے برآمد جو تاجدار سحر

HOA UFAQ SE BARAMAD JO TAJDAR E SAHAR

TOTAL MARSIYAS = 17

 

Total Page Visits: 3290 - Today Page Visits: 1

eMarsiya – Spreading Marsiyas Worldwide