MIR KHALEEQ

5+

★ میر مستحسن خلیق ؔ ★

میر خلیق میر حسن کے بیٹے اور میر انیس کے والد تھے۔ پہلے غزل کہتے تھے پھر مرثیہ گوئی اختیار کی ۔ خلیق کے اصل جوہر مرثیہ گوئی میں کھل کر سامنے آئے۔ انھوں نے میر ضمیر، مرزا فصیح اور دلگیر کے ساتھ مل کر اردو مرثیے کو ایک ادبی صنفِ سخن کی حیثیت سے احسان بخشا ۔ مقابلہ ضمیر سے رہا۔ دونوں ایک دوسرے پر سبقت لے جانے کی کوشش کرتے جس کا نتیجہ مرثیہ کی ترقی کی صورت میں نکلا۔

شہ نے کہا گر پانی پلانا بھی ہے دشوار
تو اس گھڑی حملہ نہ کرو مجھ پہ سب ایک بار
ایک ایک لڑو مجھ سے تم اے ستمگار
وہ بولے کہ تم ہو خلف ِ حیدر ِ کرارؑ
کثرت پہ ہے دم اس پہ کسی کے دم نہیں
ایک ایک لڑیں تم سے یہ طاقت ہم میں نہیں
فرزند ہو تم اس کے جو تھا قاتل ِ عنتر
والد نے تمہارے ہی اکھاڑا در ِ خیبر
پائ ہی نہیں فتح کسی فوج نے اس پر
فرزند سے ایسے کے کوئ لڑ سکے کیوں کر
جرات ہے وہی تم میں وہی شوکت و شاں ہے
قبضے میں تمہارے وہی تیغ ِ دو زباں ہےشہ سمجھے کہ ایک ایک نہیں لڑنے کا ہم سے
کیا غم ہے کہ ہم سب سے اکیلے ہی لڑیں گے
پھر سوۓ فلک ہاتھ اٹھا کر لگے کہنے
میں کہہ چکا اعدا سے تیرے حکم کے نکتے
اے خالق ِ اکبر کوئ منت نہیں باقی
شاہد میرا تو رہیو کہ حجت نہیں باقی

Source: All 34 Marsiyas were published by Marsiya Foundation, Karachi

Special Thanks to Zeeshan Zaidi for short biography

MARASI E MIR KHALEEQ 

AKHRI JIS DAM RASOOL E HAQ KO BEMARI HOI

AQLEEM E BALAGHAT SE QALAM

AZEEZO PHARO APNA GAREBAAN

BAICHAIN THI SUGHRA JO FARAQ E PADARI SE

CHEHLUM KO QATL GAH MAIN JAB AAYE AHLEBAIT

GHAR SE KOOFAY KI TARAF JAB SHAH E ABRAR CHALAY

HAAN AAMAD E BARADAR E SHAH E SHAHEED HAI

JAB AAYE HARAM SHAM KE NAZDEEK WATAN SE

JAB AAYI KARBALA MAIN DASWEEN SHAB MUHARRAM KI

JAB ASGHAR E MASOOM KI GARDAN PA LAGA TEER

JAB BAHR E WAGHA AAZIM E MAIDAN HOE AKBAR

JAB BALI SAKINA PE YATEEMI KI SHAB AAYI

JAB BANDH CHUKAY MAIDAN MAIN PARE FAUJ E SITAM KE

JAB CHAHI REZA SHAH SE ABBAS NE RAN KI

JAB CHORH WATAN KOOFE KO JANE LAGAY SHABBIR

JAB PESH KHAIMA SHEH NE NIKALA MADINE SE

JAB SIBT E MUSTAFA NE WATAN SE SAFAR KIYA

JAB TEGH CHALI SARWE GULISTAN E HASAN PAR

JIS DAM NAZAR SE BANO KE AKBAR NEHAAN HOYE

KARBALA MAIN JO SHAH E DEEN KE KHAYAM AA POHANCHAY

KIS NOOR KI MAJLIS MAIN BHARI JALWAGARI HAI

LAR CHUKAY JAB RUFAA SHAH KE SITAMGARON SE

LASH AKBAR KI UTHA RAN SE JO SHABBIR CHALAY

MOMINO AAYI JO AULAD E HASAN KI BARI

NIKLA JO SAR MEHR E GAREBAN E SAHAR SE

QASIM BANA JAHAN SE JAB KOOCH KAR GAYA

RAN MAIN JAB SHABBIR KE ANSAAR JAB MAARE GAYE

SABIT GHAM E SHABBIR HAI QURAN E KHUDA SE

SAF BANDH CHUKI MAIDAN MAIN JAB FAUJ E SITAM KI

SAJJAD KO KHABAR JO HOI QATL E SHAH KI

SARWAR AKAYLAY JAB RAHE DASHT E NABARD MAIN

SHAH KE GHAR MAIN SHAB E QATL AJAB MATAM THA

SUGHRA KO JUDAI HOI JAB SIBT E NABI SE

SUGHRA NE KHABAR PAAYI MERA NAMA BAR AAYA

ZABHA JAB HO GAYA ZAHRA KA PISAR KHANJAR SE

 

TOTAL MARSIYA = 35

932total visits,4visits today

eMarsiya – Spreading Marsiyas Worldwide