FARIGH SEETAPURI

3+

★ سید محمد افضل فارغ  ★

سید محمد افضل فارغ  انیس کے مشہور شاگردوں میں سے تھے ۔ ہر اس مجلس میں ہوتے جہاں انیس پڑھتے ۔ پہلے ہی مرثیے میں فارغ کی صلاحیتیں اوج ثریا سے باتیں کرتی نظر آئیں۔ جس میں 386 بند موجود تھے. میر انیس کی الہامی شاعری سن کر ان کے گرویدہ ہوگۓ ۔ انیس نے افضل سے بدل کر تخلص فارغ رکھ دیا ۔ خود فارغ ایک شعر میں فخر کرتے ہیں
ملا کیا رتبۂ اعلی’ علی کے مدح خوانوں سے
زمین شعر باتیں کر رہی ہے آسمانوں سے
ولادت علی اکبر
برسوں رویا کیۓ یاں تک وہ محمد  کے یتیم
جوش میں آگیا بحر  کرم  رب  کریم
دل میں احمد  کے تصوّر نے زبس گھر پایا
لال ، شبّیر  نے ہمشکل  پیمبر  پایا
حضرت عباس  کی شخصی وجاہت
حیدر  کی سب تھی شان وہ رعب دلیر تھا
گویا خدا کے شیر کے قالب ميں شیر تھا
ربای میں بھی رزم پیش کیا
کب لاتے تھے تاب اہل  شر حملے کی
صورت تھی جدا   وغا میں ہر حملے کی
یوں فوج پہ جا پڑتے تھے اکبر  دم  جنگ
ہو جاتی تھی کوفے میں خبر حملے کی
فارغ کے کلام میں فصاحت کلام کے ساتھ صنائع و بدائع بھی ملتی ہے ۔ امام عالی مقام اور یذید پلید
وہ خار ہے وہ خار جو خاروں میں ہے خراب
یہ پھول ہے وہ پھول جو پھول میں انتخاب
وہ نار ہے وہ نار جو ناروں میں ہے عذاب
یہ نور ہے وہ نور ، جو نوروں میں آفتاب
وہ ماند ہے وہ ماند ، جو ماندوں میں ماند ہے
یہ چاند ہے وہ چاند ، جو چاندوں میں چاند ہے

Special Thanks to Zeeshan Zaidi for short biography and photo

MARASI E FARIGH

 

BAKHUDA MAZHAR E ISRAR E KHUDA HAIN AHMAD

DEKH AYE MERE FALAK MERE AUJ E KAMAL KO

MIAN BULBUL E HADIQA E NAZM E ANEES HOON

MAIN DAWAR E MA’ANI HOON KHUDAWAND E SUKHAN HOON

REYAZ E DEHR HARA KIN KE FAIZ E AAM SE HAI

SHAUKAT NUMAA E FAUJ E SUKHAN HAI ALAM MERA

SHAUKAT NUMA E FAUJ SUKHAN HAI ALAM MERA

TOTAL MARSIYAS = 6

551total visits,2visits today

eMarsiya – Spreading Marsiyas Worldwide