SARDAR NAQVI

پروفیسر سردار نقوی

سید سردار محمد نقوی المعروف سردار نقوی 21 مارچ، 1941ء کو امروہہ، اتر پردیش، برطانوی ہندوستان میں پیدا ہوئے۔ والد کا نام سید انوار محمد نقوی تھا۔ ابتدائی تعلیم کا سلسلہ امروہہ ہی میں پائ ۔ تقسیم ہند کے بعد اپنے وطن سےہجرت کر کے کراچی آ گئے اور یہیں باقی تعلیم مکمل کی۔ کراچی یونیورسٹی سے بی ایس سی (آنرز) اور 1962ء میں ایم ایس سی (ریاضی) کی اسناد حاصل کیں

پروفیسر سردار نقوی نے ملازمت کی ابتدا 1963ء میں جیالوجیکل سروے ڈپارٹمنٹ سے کی۔ بعد ازاں مختلف سرکاری عہدوں پر فائز رہے ۔ لیکچرر شپ اختیار کی اور  1997ء میں بحیثیت پروفیسر اور سربراہِ شعبہ جیالوجی  ریٹائرمنٹ لے لی ۔ 

انہوں شاعری کی ابتدا 1957ء میں سولہ برس کی عمر میں کی۔ ابتدا میں ہی ترقی پسند تحریک سے متاثر ہوئے اور اپنی شاعری کا رشتہ انسانی دکھ اور آلام سے جوڑا۔ انہوں نے نعت ، منقبت ، غزل، مرثیہ ہر صنف میں لکھا۔ تاہم مرثیہ گوئی میں ملک گیر شہرت پائی۔ ایک عرصہ تک ریڈیو پاکستان کراچی اور پی ٹی وی پر ان کا مرثیہ تحت اللفظ ہر سال باقاعدگی سے پیش ہوا۔

سردار نقوی کی وفات 5 فروری 2001ء کو کراچی میں ہوئی اور انہیں کراچی کے قبرستان وادیِ حسین میں دفن کیا گیا۔

Special Thanks to Irum Naqvi, Pakistan for her research, short bio and providing Marsiyas of Sardar Naqvi

MARASI E SARDAR NAQVI

AQL E MUSLIM HO TO HADI KI SANAA KARTI HAI

ILM KI MANZIL E MAIRAJ HAI IRFAN E RASOOL

KARBALA AINA E AZMAT E INSANI HAI

KARBALA DEEN KI TEHZEEB KA GEHWARA HAI

SHEHR E IBLAAGH MAIN PHIR BAAB E WAFA KHULTA HAI

ZIKR E SHABBIR HAI AASAN YEHI MUSHKIL HAI

TOTAL MARSIYAS = 6

 

270total visits,2visits today

Spreading Marsiyas Worldwide