MIR NAFEES – میر نفیس

Special Thanks to Ali Imam Gohar, Irtiza Abbas Naqvi and Farhan Raza for Intro and these Marsiyas

مراثئ میر نفیس

باغ سخن میں آمد فصل بہار ہے

BAAGH E SUKHAN MAIN AAMAD E FASL E BAHAR HAI

باندھی کمر جو فوج خدا نے جہاد پر

BANDHI KAMAR JO FAUJ E KHUDA NE JEHAD PAR

بیاض صبح کا جب چرخ پر ظہور ہوا

BAYAZ E SUBHA KA JAB CHARKH PAR ZAHOOR HOA

پھر آج جوہر تیغ زباں دکھاتا ہوں

PHIR AAJ JOHAR E TEGH E ZABAN DIKHATA HOON

پھر بادشاہ ملک سخن حکمراں ہے آج

PHIR BADSHAH E MULK E SUKAN HUKMARAN HAI AAJ

پھر طبع سلیم انجمن آراۓ سخن ہے

PHIR TABAY SALEEM ANJUMAN AARA E SUKHAN HAI

تسبیح فاطمہ کے جو دانے بکھر گۓ

TASBEEH E FATIMA KE JO DAANE BIKHAR GAYE

ثناۓ یوسف شبیر ہے جمال سخن

SANA E YOUSUF E SHABBIR HAI JAMAL E SUKHAN

جب عابدوں کو طاعت رب میں سحر ہوئ

JAB AABIDON KO TA AT E RAB MAIN SAHAR HOI

خاندان شہ لولاک کا مداح ہوں میں

KHANDAN E SHAH E LOLAK KA MADAH HOON MAIN

داخل خانہء زنداں ہوۓ جس دم قیدی

DAKHIL E KHANA E ZINDAN HOYE JIS DAM QAIDI

دربار میں جب اہل حرم ننگے سر گۓ

DARBAR MAIN JAB AHL E HARAM NANGAY SIR GAYE

دشت غربت میں وطن سے شہ دیں جاتے ہیں

DASHT E GHURBAT MAIN WATAN SE SHAH E DEEN JAATE HAIN

رخصت ہے پدر سے علی اکبر سے جواں کی

RUKHSAT HAI PIDAR SE ALI AKBAR SE JAWAN KI

زنداں میں جب کہ دختر شبیر مر گئ

ZINDAN MAIN JAB KE DUKHTAR E SHABBIR MAR GAYI

سراج محفل اعجاز ہے کلام مرا

SIRAJ E MEHFIL E AIJAZ HAI KALAM MERA

شوکت مرے سخن میں ثناۓ علی کی ہے

SHAUKAT MERE SUKHAN MAIN SANA E ALI SE HAI

طبع روشن ہے مری شمع شبستان سخن

TABAY ROSHAN HAI MERI SHAME SHABISTAN E SUKHAN

فراغ ماہ کو جب رات کے سفر سے ہوا

FARAGH MAH KO JAB RAAT KE SAFAR SE HOA

کیا جگر بند شہنشاہ رسالت کو ملے

KYA JIGARBAND SHAHENSHAH E RESALAT KO MILAY

لطف کلام مدح شہ خاص و عام ہے

LUTF E KALAM E SHAH E KHAS O AAM HAI

مری زباں کو شرف مدح پنجتن کو ملا

MERI ZUBAN KO SHARAF MADH E PANJATAN SE MILA

مطلع مہر فصاحت ہے طبیعت میری

MATLA E MEHR E FASAHAT HAI TABIAT MERI

معجز بیاں ہوں فیض رسالت ماب سے

MOJIZ BAYAN HOON FAIZ E RESALAT MAAB SE

معراج سخن مدح رسول دوسرا ہے

MERAJ E SUKHAN MADHE RASOOL E DOSARA HAI

میں بلبل شیریں سخن باغ علی ہوں

MAIN BULBUL E SHEREEN SUKHAN E BAB E ALI HUN

ہاں اے سنان غم جگر و دل کے پار ہو

HAN AYE SINAN E GHAM JIGAR O DIL KE PAR HO

ہاں اے عروس حجلہء اعجاز رو دکھا

HAAN AYE UROOS HUJLA E EJAZ E ROU DIKHA

وفا کا نام ہے روشن وفا شعاروں سے

WAFA KA NAAM HAI ROSHAN WAFA SHUARON SE

TOTAL MARSIYAS = 29

 

Total Page Visits: 2383 - Today Page Visits: 3

eMarsiya – Spreading Marsiyas Worldwide