QAISAR BARHAVI

3+

SHAM E ASHOOR

قیصر بارہوی

نام سید قیصر عباس زیدی المعروف قیصر بارہوی 16 جنوری 1928 کو بارہہ کی ایک بستی کیتھوڑا میں پیدا ہوئے۔ والد سید وزارت حسین زیدی کے زیرِ تربیت ابتدائ تعلیم پای ۔ گیارہ برس کی عمر  میں لکھنو آۓ اور 1950 تک وہاں مقیم رہ کر مغربی تعلیم کے ساتھ علومِ مشرقی کی تحصیل بھی کی۔

علم عروض بھی پایا ۔ 1938 میں شاعری کی ابتدا کی ۔شاعری میں نجم آفندی سے متاثر تھے ۔ 1950 میں پاکستان آ گئے ۔ اور گورنمنٹ کی ملازمت اختیار کی ۔پنجاب کے مختلف حصوں میں رہے تاہم  1969 سے مستقل لاہور میں قیام رہا ۔

لکھنو کے زمانے سے ہی غزل ، سلام ، قصیدے اور رباعیات کہیں البتہ مکمل مرثیہ 1952 میں کہا ۔انتدائ سات مرثیوں کا مجموعہ شبابِ فطرت شائع ہوا ۔اور جلس ہی اس زود گو شاعر نے مرثیہ گوئ کے حوالے سے ملک گیر شہرت پا لی ۔ انکی کتب میں موج شہر ، شباب فطرت ، عظیم مرثیے شامل ہیں۔

جناب قیصر بارہوی نے 26 دسمبر 1996 میں کراچی میں وفات پائ

MARASI E QAISAR BARHAWI

 

MERI ZUNAB PE ILM E ALI KA BAYAN HAI

SHAM E ASHOOR

 

TOTAL MARSIYAS = 2

467total visits,2visits today

eMarsiya – Spreading Marsiyas Worldwide